Connect with us
Wednesday,16-June-2021

جرم

نکسلیوں کےحملے میں بی جے پی رکن اسمبلی اور چار سکیورٹی اہلکار ہلاک : چھتیس گڑھ

Published

on

چھتیس گڑھ کے ضلع دنتے واڑہ میں نکسلیوں کی طرف سے کئے گئے بارودی سرنگ دھماکے سے بی جے پی کے ممبر اسمبلی بھیمامنڈاوی اور چار سیکورٹی اہلکار ہلاک ہو گئے ۔
پولیس ذرائع نے بتایا کہ دنتے واڑہ کے ممبر اسمبلی بھیما مڈاوي بستر پارلیمانی سیٹ پر تشہر کے آخری دن بچیلي میں میٹنگ میں شرکت کے بعد شام تقریبا چار بجے نکلنار واپس جا رہے تھے کہ راستے میں کیو یكوڈا سے چار کلومیٹر دور نکسلیوں نے بارودی سرنگ سے دھماکہ کر کے ان کی گاڑی کو اڑا دیا۔ یہ دھماکے اتنا شدید تھا کہ ممبر اسمبلی کی گاڑی کے پرخچے اڑ گئے۔
ذرائع نے بتایا کہ اس دھماکہ میں رکن اسمبلی مانڈوی اور چار سکیورٹی اہلکار ہلاک ہو گئے ۔ ان کی لاشوں کے ٹکڑے دور دور تک بکھر گئے ۔ نكسليو نے دھماکے کے بعد فائرنگ بھی کی اور اس کے بعد جنگلوں کی طرف بھاگ گےجس مقام پر دھماکہ ہوا وہاں کئی فٹ گہرا گڈھا بن گيا ۔ جائے وقوعہ پر پہنچی پولیس اور انتظامیہ کے اعلی افسران اضافی پولیس فورس کو لے کر پہنچ گئے ہے اور علاقے میں تلاشی شروع کی گئی ہے۔
یہ علاقہ بستر پارلیمانی حلقہ میں آتا ہے جہاں پر آج شام ہی ا نتخابی مہم ختم ہو ئی ہے ۔یہاں پر لوک سبھا انتخابات کے پہلے مرحلے میں 11 اپریل کو پولنگ ہونی ہے ۔ اس واقعہ سے پورے علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا ہے۔ سیاسی پارٹیوں کے لوگوں اور انتخابی ڈيوٹي پر تعینات ملازمین میں سب سے زیادہ دہشت کا ماحول ہے۔ اس نکسل علاقے میں گزشتہ روز سے ہی پولنگ عملے سیکورٹی فورسز کے ہیلی کاپٹروں سے روانہ کیا جا رہاہے۔

جرم

ممبئی کے کاندیولی میں کوویڈ ویکسین کے نام پر، 400 افراد کے ساتھ دھوکہ دھڑی, 1400 روپے کا ویکسین لگوایا، لیکن اصلی یا جعلی؟

Published

on

Vaccine

کورونا کو شکست دینے کے لئے ، حکومت لوگوں سے ویکسین لگوانے کی اپیل کر رہی ہے۔اس اپیل کا اثر بھی نظر آرہا ہے۔ کچھ جعلساز بھی اس کا فائدہ اٹھا رہے ہیں اور ویکسینیشن کے نام پر لوگوں کو گمراہ کررہے ہیں۔ جعلسازی کا ایسا ہی ایک تازہ معاملہ ممبئی کے کاندیولی علاقے میں منظرعام پر آیا ہے۔ یہاں کے ہیرانندانی ہیریٹیج سوسائٹی میں لگائے گئے کیمپ میں 400 افراد کا ویکسینیشن کیا گیا، لیکن ویکسین کے بعد ملنے والے سرٹیفکیٹ کی وجہ سے یہ ویکسینیشن شکوک و شبہات کی زد میں آگیا ہے۔اب لوگ یہ جاننے کی کوشش کر رہے ہیں کہ انہیں کورونا ویکسین لگا ہے یا کچھ اور۔ لوگوں نے مقامی کاندیولی تھانے میں تحریری شکایت درج کروائی ہے۔ فی الحال پولیس تفتیش کر رہی ہے۔ اس واقعے کے بعد ، لوگوں کے ذہنوں میں ویکسین سے متعلق شک گہرا ہوگیا ہے۔ ایسی صورتحال میں ، لوگوں کو ویکسین کے بارے میں چوکس اور بیدار رہنے کی ضرورت ہے۔ اگر آپ کے علاقے یا معاشرے میں نجی ویکسینیشن کیمپ موجود ہے تو ہوشیار رہیں۔ لوگوں کا الزام ہے کہ انھیں فی کس 1400 روپے لے کر ٹیکے لگائے گئے ہیں۔

30 مئی کو کاندیولی میں ہیرانندانی ہیریٹیج سوسائٹی کے کیمپ میں 400 افراد کو کوویڈ کا ویکسین لگایا گیا.۔ سوسائٹی کے ساکن ہتیش پٹیل نے بتایا کہ ان کے بیٹے کو بھی کیمپ میں ٹیکہ لگایا گیا ۔ سوسائٹی نے مہندر سنگھ نامی ایک شخص کو مقرر کیا تھا۔ اس نے دعوی کیا تھا کہ ممبئی کے ایک بڑے اسپتال کے ذریعے یہ ویکسینیشن کروائی گئی ہے۔ ویکسینیشن کے وقت ایسا کچھ نہیں دیکھا گیا تھا۔ پٹیل نے کہا کہ ویکسینیشن کے بعد ، جب طویل عرصے سے مستفید افراد کو سرٹیفکیٹ جاری نہیں کیے گئے تو ، سوسائٹی نے متعلقہ شخص سے رابطہ کیا۔ اس کے بعد ، جب لوگوں کو سرٹیفکیٹ ملا ، تو ان کے ہوش اڑ گئے۔ کچھ کو ناناوتی اسپتال کے سرٹیفکیٹ جاری کیے گئے ، کچھ کو بی ایم سی کے نیسکو ، کچھ کو شیوم اسپتال اور کچھ دوسرے اسپتالوں کے۔ یہ تمام سرٹیفکیٹ بیک وقت جاری نہیں کیے گئے تھے ، بلکہ مختلف دنوں میں جاری کیے گئے تھے۔

متعلقہ شخص سوسائٹی کے ہر فرد سے رابطہ کرکے ان کے موبائل پر آئے او ٹی پی مانگ کر انہیں سرٹیفکیٹ جاری کررہا تھا۔ پٹیل نے بتایا کہ جب ناناوتی اسپتال سے متعلق فائدہ اٹھانے والے کو جاری کردہ سرٹیفکیٹ کی سچائی جاننے کی کوشش کی تو انہوں نے کہا کہ متعلقہ شخص کی ویکسینیشن ان کے ذریعہ نہیں کی گئی ۔ حقیقت جاننے کے لئے ، سوسائٹی نے پولیس کو تحریری شکایت کی ہے۔ سینئر پولیس انسپکٹر باباصاحب سالونکھے نے بتایا کہ جس شخص کے خلاف شکایت کی گئی ہے وہ فی الحال فرار ہے۔ ناناوتی اسپتال کے ترجمان نے بتایا کہ اس سوسائٹی میں ان کے اسپتال کے ذریعہ کوئی کیمپ کا انعقاد نہیں کیا گیا ہے۔ اسپتال نے اس ضمن میں محکموں کو بھی آگاہ کردیا ہے اور جلد ہی پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کرائی جائے گی۔ اس معاملے میں ، مقامی ایم ایل اے نے بتایا کہ جس کووی شیلڈ وائل کا استعمال کیا گیا تھا اس کے لیبل پر ‘ناٹ فار سیل’ لکھا ہوا تھا۔ اس سے ایسا لگتا ہے کہ یہ ویکسین کسی سرکاری مرکز سے جاری کی گئی ہے۔ تفتیش میں بہت بڑی گڑبڑی سامنے آسکتی ہے۔

Continue Reading

جرم

گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 62،224 نئے کیسز

Published

on

Corona infection

ملک میں کورونا وائرس (کووڈ-19) کی رفتار دھیمی پڑھنے اور انفیکشن کے کیسز کے مقابلے اس سے صحتیاب ہونے والوں کی تعداد زیادہ رہنے سے ایکٹو کیسز کی شرح کم ہو کر تین فیصد سے نیچے آ گئی، اس دوران منگل کے روز 28 لاکھ 00 ہزار 458 افراد کو کورونا کے ٹیکے لگائے گئے ہیں۔ ملک میں اب تک 26 کروڑ 19 لاکھ 72 ہزار 014 افراد کو ٹیکے لگائے جا چکے ہیں۔

مرکزی وزارت صحت کی جانب سے بدھ کی صبح جاری اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 62،224 نئے کیسز سامنے آنے کے ساتھ ہی متاثرہ افراد کی تعداد دو کروڑ 96 لاکھ 33 ہزار 105 ہوگئی۔ اس دوران ایک لاکھ 07 ہزار 628 مریض صحتیاب ہوئے ہیں، جس سے ملک میں اب تک کورونا سے نجات پانے والوں کی تعداد دو کروڑ 83 لاکھ 88 ہزار 100 ہو گئی۔ ایکٹو کیسز 47 ہزار 946 کم ہو کر آٹھ لاکھ 65 ہزار 432 ہو چکے ہیں۔

گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 2542 مریضوں کی موت ہو گئی ہے، اور اس وباء سے مرنے والوں کی مجموعی تعداد تین لاکھ 79 ہزار 573 ہوگئی ہے۔ ملک میں ایکٹو کیسز کی شرح 2.92 فیصد، شفایابی کی شرح 95.80 فیصد اور شرح اموات 1.28 فیصد ہے۔

مہاراشٹر میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں ایکٹو کیسز 8992 کم ہو کر 141440 ہو گئے ہیں۔ اس دوران ریاست میں 15176 مزید مریضوں کی شفایابی کے بعد کورونا سے صحتیاب ہونے والوں کی تعداد بڑھ کر 5669179 ہو گئی ہے، جبکہ مزید 1458 مریضوں کی موت ہونے سے مرنے والوں کی تعداد 114154 ہو گئی ہے۔

کیرالہ میں اس دوران ایکٹو کیسز 1456کم ہوئے ہیں اور ان کی تعداد اب 112792 رہ گئی ہے اور 13536 مریضوں کے صحتیاب ہونے کی وجہ سے کورونا کو شکست دینے والے افراد کی تعداد 2623904 ہو گئی ہے، جبکہ مزید 166 مریضوں کی موت ہونے سے مرنے والوں کی تعداد 11508 ہو گئی۔

Continue Reading

جرم

سری نگر میں مسلح جھڑپ، ایک جنگجو ہلاک

Published

on

kashmir jang

سری نگر کے مضافاتی علاقہ واگورہ نوگام میں بدھ کی علی الصبح شروع ہونے والے ایک جنگجو مخالف آپریشن میں ایک جنگجو مارا گیا ہے۔

جموں و کشمیر پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ واگورہ نوگام میں جاری جنگجو مخالف آپریشن میں اب تک ایک جنگجو مارا گیا ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ علاقے میں آپریشن جاری ہے۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ واگورہ میں جنگجوئوں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر سکیورٹی فورسز نے منگل اور بدھ کی درمیانی رات کو مذکورہ علاقے کو محاصرے میں لے کر تلاشی آپریشن شروع کیا۔

انہوں نے بتایا کہ مشتبہ جنگجو کو محاصرے میں لینے کے دوران وہاں موجود جنگجوئوں نے فائرنگ کی، جس کے بعد طرفین کے درمیان جھڑپ شروع ہوئی۔

Continue Reading
Advertisement

رجحان

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com