Connect with us
Saturday,08-August-2020

بزنس

مسلسل چوتھے روز پٹرول – ڈیزل کی قیمتیں مستحکم

Published

on

petrol

پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں جمعہ کو لگاتار چوتھے روز بھی استحکام رہا۔ اس سے قبل جون میں پٹرول 13 فیصد اور ڈیزل 16 فیصد مہنگا ہواتھا۔
ملک کی سب سے بڑی آئل مارکیٹنگ کمپنی انڈین آئل کارپوریشن کے مطابق دہلی میں آج پٹرول کی قیمت 80.43 روپے فی لیٹر پر مستحکم رہی۔ یہ 27 اکتوبر 2018 کے بعد کی بلند ترین سطح ہے۔ ڈیزل کی قیمت بھی 80.53 روپے فی لیٹر ریکارڈ سطح پر مستحکم رہی۔
جون میں دہلی میں پٹرول 9.17 روپے یعنی 12.87 فیصد اور ڈیزل 11.14 روپے یعنی 16.05 فیصد مہنگا ہوا تھا۔
کولکتہ ، ممبئی اور چنئی میں پٹرول کی قیمتیں بالترتیب 82.10 روپے ، 87.19 روپے اور 83.63 روپے فی لیٹر پر مستحکم رہیں۔ ڈیزل کی قیمتیں بھی کولکاتہ میں 75.64 روپے ، ممبئی میں 78.83 روپے اور چنئی میں 77.72 روپے فی لیٹر پر برقرار ہیں۔
ملک کے چار بڑے میٹروز میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمت (فی لیٹر میں) مندرجہ ذیل تھی۔
میٹرو ———– پٹرول —————– ڈیزل
دہلی ———— 80.43 (فکسڈ) ———- 80.53 (فکسڈ)
کولکتہ ——— 82.10 (فکسڈ) ———- 75.64 (فکسڈ)
ممبئی ————- 87.19 (فکسڈ) ———- 78.83 (فکسڈ)
چنئی ———— 83.63 (فکسڈ) ———- 77.72 (فکسڈ)

بزنس

پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں مستحکم

Published

on

PETROL

ملک میں پٹرول کی قیمتیں ہفتے کے روز لگاتار 40 ویں دن اور ڈیزل کی قیمتیں مسلسل آٹھویں دن مستحکم رہی۔
ملک کی سب سے بڑی آئل مارکیٹنگ کمپنی انڈین آئل کارپوریشن کے مطابق قومی دارالحکومت دہلی میں پٹرول کی قیمت 80.43 روپے فی لیٹر پر مستحکم رہی ، یہ 27 اکتوبر 2018 کے بعد کی بلند ترین سطح ہے۔ کولکتہ ، ممبئی اور چنئی میں بھی اس کی قیمتیں بالترتیب 82.05 ، 87.19 روپے اور 83.63 روپے فی لیٹر پر رہیں۔
دہلی میں ڈیزل کی قیمت 73.56 روپے فی لیٹر پر مستحکم رہی۔ اس کی قیمت کولکتہ میں 77.06 روپے ، چنئی میں 78.86 روپے اور ممبئی میں 80.11 روپے فی لیٹر پر مستحکم رہی۔
ملک کے چار بڑے میٹرو میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمت (فی لیٹر ) مندرجہ ذیل تھی۔
میٹرو ———– پٹرول —————– ڈیزل
دہلی ———— 80.43 (فکسڈ) ———- 73.56 (فکسڈ)
کولکتہ ——— 82.05 (فکسڈ) ———- 77.06 (فکسڈ)
ممبئی ————- 87.19 (اسٹیشنری) ———- 80.11 (فکسڈ)
چنئی ———— 83.63 (فکسڈ) ———- 78.86 (فکسڈ)

Continue Reading

بزنس

اتار چڑھاؤ کے بعد سبز نشان میں رہا شیئر بازار

Published

on

عالمی سطح سے ملنے والے کمزور اشاروں کے ساتھ ساتھ گھریلو سطح پر سرمایہ کاری کے کمزور رجحان کی وجہ سے جمعہ کے روز شیئر بازار اتار چڑھاؤ کے بعد سبز نشان میں ہی بند ہونے میں کامیاب رہا۔ اس مدت میں، بی ایس ای کا سنسیکس 15.12 پوائنٹس اضافے کے ساتھ 38040.57 پوائنٹس پر اور نیشنل اسٹاک ایکسچینج (این ایس ای) کا نفٹی 13.90 پوائنٹس کے اضافے سے 11214.05 پوائنٹس پر رہا۔
بی ایس ای میں بیشتر گروپوں نے ہلکی سی برتری درج کی۔ توانائی زمرے میں سب سے زیادہ 1.21 فیصد اضافہ ہوا، جبکہ سی ڈی 1.73 فیصد، آئی ٹی 1.15 فیصد اور ٹیک 0.86 فیصد گراوٹ میں رہے۔ بی ایس ای میں مجموعی طور پر 2853 کمپنیوں کا کاروبار ہوا، جن میں سے 1664 سبز نشان میں اور 1036 سرخ نشان میں رہے جبکہ 163 میں کوئي تبدیلی نہیں آئي۔
عالمی سطح پر، بیشتر اہم انڈيکس گراوٹ کے شکار رہے، سوائے جرمنی کے ڈیکس کے جس میں 0.03 فیصد کا اضافہ درج کیا گیا۔ چین کا شنگھائی کمپوزٹ 0.96 فیصد، ہانگ کانگ کا ہینگسنگ 1.60 فیصد، جاپان کا نک‏ئی 0.39 فیصد اور برطانیہ کا ایف ٹی ایس ای 0.10 فیصد گراوٹ میں رہا۔

Continue Reading

بزنس

دہلی میں ای- گاڑی پالیسی کا اعلان، الیکٹرک گاڑیوں کی خریداری پر رعایت ملے گی

Published

on

دہلی کی اروند کیجریوال حکومت نے دارالحکومت کو آلودگی سے پاک کرنے کے منصوبے کے تحت جمعہ کے روز ای- گاڑی پالیسی کو نافذ کرنے کا اعلان کیا، جس میں مختلف زمروں کی الیکٹرک گاڑیاں خریدنے کے لئے 30 ہزار سے لے کر 1.5 لاکھ روپے تک رعایت دی جائے گی۔
اس پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے وزیر اعلی نے کہا کہ حکومت الیکٹرک وہیکل پالیسی کے تحت اس طرح کی گاڑیاں خریدنے والوں کو مالی مدد فراہم کرے گی۔ دو پہیہ پر 30،000 روپے، کار پر 1.5 لاکھ روپے، آٹو رکشہ اور ای- رکشہ پر 30،000 روپے کی رعایت دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ دہلی حکومت نے الیکٹرک وہیکل پالیسی کو نوٹیفائی کردیا ہے۔ پانچ سال بعد جب برقی گاڑیوں پر گفتگو ہوگي، تو دہلی کا نام دنیا میں سرفہرست ہوگا۔
وزیر اعلی نے میڈیا کو بتایا کہ اس پالیسی کے دو مقاصد ہیں: آلودگی کو کم کرنا اور معیشت کو تیزکرنا۔ دہلی کی اس پالیسی کا آئندہ پانچ برسوں میں دنیا بھر میں تذکرہ ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ اس وقت یہ پالیسی تین سال کی ہے۔ تین سال بعد اس پر نظر ثانی کی جائے گی۔ اگر اس سے پہلے بھی ضرورت پیش آتی ہے تو اس پر غور وخوض کیا جائے گا۔ گزشتہ ڈھائی برسوں میں یہ پالیسی کافی غورو فکر کے بعد تیار کی گئی ہے۔
مسٹر کیجریوال نے کہا کہ 2024 تک دہلی میں رجسٹرڈ تمام نئی گاڑیوں میں سے کم از کم 25 فیصد بجلی کی گاڑیاں ہونی چاہئیں۔ فی الحال یہ محض 0.2 فیصد ہے۔ انہوں نے کہا کہ بجلی کی گاڑیاں چارج کرنے کے لئے آئندہ ایک سال میں 200 اسٹیشن بنائے جائیں گے۔ الیکٹرک گاڑی کی خریداری پر روڈ ٹیکس اور چنگی نہیں ہوگی۔

Continue Reading
Advertisement

رجحان

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com