Connect with us
Tuesday,20-April-2021

(جنرل (عام

جبین نانو افضل خان مثالی معلمہ کے ایوارڈ سے سرفراز

Published

on

school-winning

کھام گاؤں (نامہ نگار )
رحمانیہ اردو ہائی اسکول ریسوڑ کی فعال و محنتی معلمہ جبین بانو افضل خان کو خادم امت و خادم دختران ناندیڑ نے تعلیمی سال 21_2020 کا مثالی معلمہ ایوارڈ سے سرفراز کیا ہے۔ محترمہ کے ایوارڈ ملنے پر واشم ضلع کے اردو حلقوں میں خوشی پائی جارہی ہے۔
معلوم رہے کہ ناندیڑ کی فعال سماجی تنظیم خادم امت و خادم دختران ہر سال ریاستی سطح پر بہترین تعلیمی کارکردگی پیش کرنے والے اساتذہ اکرام کی خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے انہیں ایوارڈ سے سرفراز کرتی ہے۔ امسال واشم ضلع سے ریسوڑ شہر کے رحمانیہ اردو ہائی اسکول کی فعال و سرگرم معلمہ جبین بانو کی تعلیمی خدمات کے اعتراف میں ایوارڈ سے نوازہ ہے۔ محترمہ کو یہ اعزاز نانڈیڑ میں منعقدہ ایک عظیم الشان جلسہ استقبال میں دیا گیا۔ اس ایوارڈ ملنے پر اسکول کے صدر مدرس ، تدرسی و غیر تدریسی عملہ و رشتہ داروں نے انہیں مبارکباد پیش کرتے ہوئے مستقبل کے لئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

Continue Reading
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

(جنرل (عام

کورونا بحران کا شاخسانہ : کشمیری طلباء و دیگر لوگ واپس گھر لوٹ رہے ہیں

Published

on

Kashmiri-Students

کورونا کیسز میں روز افزوں ہو رہے بے تحاشا اضافے کے پیش نظر ملک کے مختلف علاقوں میں قائم تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم کشمیری طلباء نے وادی واپس آنا شروع کیا ہے۔

تاہم جموں وکشمیر انتظامیہ کی طرف سے کورونا کی روک تھام کے لئے مختلف النوع پابندیاں عائد کرنے کے باوجود بھی غیر مقامی مزدور و دوسرے پیشہ ور لوگ وادی میں ہی ٹھہرے ہوئے ہیں۔

دریں اثنا جموں و کشمیر اسٹوڈنٹس ایسو سی ایشن نے بیرون وادی کے تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم طلباء کی مدد کے لئے ایک ہیلپ لائن قائم کی ہے۔

طرفہ بشیر نامی ایک طالبہ جو اتر پردیش کے ایک کالج میں انجینئرنگ کی پڑھائی کر رہی ہیں، نے یو این آئی کو بتایا کہ ہمارے کالج اور ملحقہ علاقوں میں کورونا کے کئی کیسز آنے کے بعد کالج کے سبھی طلباء اپنے اپنے گھر واپس چلے گئے۔

انہوں نے کہا: ’میں اپنے کالج کے بیس دیگر طلباء کے ساتھ اتوار کو کشمیر پہنچی اور جس جہاز میں ہم دلی سے کشمیر آئے وہ ان طلباء سے بھرا ہوا تھا، جو ملک کے مختلف حصوں کے تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم ہیں۔‘

اطہر شاہ نامی ایک طالب علم نے کہا کہ وہ پندرہ دیگر طلباء کے ساتھ پونے سے گھر واپس لوٹا۔
انہوں نے کہا: ’ہمیں سال گذشتہ کے لاک ڈاؤن کا تلخ تجربہ یاد تھا جب ٹرانسپورٹ کے تمام وسائل کو راتوں رات بند کر دیا گیا تھا ہم نے اس سال لاک ڈاؤن کا اعلان ہونے سے پہلے ہی اپنے گھر واپس آنے کا فیصلہ لیا۔‘

ان کا کہنا تھا کہ دلی اور ممبئی کے ہوائی اڈے طلباء اور دوسرے لوگوں سے بھرے ہوئے ہیں، جو واپس کشمیر آ رہے ہیں۔ موصوف نے کہا کہ بنگلہ دیش اور دوسرے ممالک میں زیر تعلیم طلبا بھی واپس گھر آ رہے ہیں۔

جموں وکشمیر اسٹوڈنٹس ایسو سی ایشن کے ایک ترجمان نے بتایا کہ ہم نے بیرون وادی زیر تعلیم طلباء کو در پیش مسائل کو حل کرنے کے لئے ایک ہیلپ لائن قائم کی ہے، اور ہم نے محتاجوں کی مدد کے لئے رضاکاروں کی ٹیمیں بھی تشکیل دی ہیں۔

Continue Reading

(جنرل (عام

یوپی کے پانچ شہروں میں تالا بندی کے فیصلے پر سپریم کورٹ کی پابندی

Published

on

SUP

سپریم کورٹ نے کورونا وائرس کی عالمی وباء کے تیزی سے پھیلنے کے سبب اترپردیش کے پانچ شہروں میں لاک ڈاؤن نافذ کرنے کے الہ آباد ہائی کورٹ کے فیصلے پر منگل کے روز روک لگا دی۔

ہائی کورٹ نے حکومت اتر پردیش کو کورونا وائرس کی سنگین صورتحال کے پیش نظر پریاگراج، لکھنؤ، کانپور، بنارس اور گورکھپور میں 26 اپریل تک مکمل تالا بندی نافذ کرنے کی ہدایت دی تھی۔

چیف جسٹس شرد اروند بوبڑے، جسٹس اے ایس بوپنا اور جسٹس وی رما سبرمنیم پر مشتمل ڈویژن بنچ نے سالیسٹر جنرل تشارمہتا کے دلائل سننے کے بعد ہائي کورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد روک دی، اور دو ہفتوں کے بعد معاملے کی سماعت کا فیصلہ کیا۔

حکومت اترپردیش کی جانب سے پیش ہونے والے مسٹر تشار مہتا نے دلیل دی کہ عدالتی حکم کے ذریعے پانچ شہروں میں مکمل تالا بندی انتظامی مشکلات کا سبب بنے گی۔

دریں اثناء، عدالت عظمی نے ریاستی حکومت کو اگلی سماعت تک کورونا وائرس کی وبا سے نمٹنے کے لئے کی جانے والی کوششوں کی معلومات فراہم کرنے کی ہدایت دی۔

مسٹر تشار مہتا نے اتر پردیش حکومت کی جانب سے آج صبح اس معاملے کا خصوصی ذکر کرکے اس کی جلد سماعت کرنے کی درخواست کی تھی، جسے بنچ نے قبول کرلیا اور پہلے سے درج تمام مقدموں کی سماعت کے بعد ریاستی حکومت کی اپیل پر غور کیا۔ بنچ نے سینئر ایڈووکیٹ پی ایس نرسمہا کو اس معاملے میں رفیق عدالت مقرر کیا۔

Continue Reading

(جنرل (عام

لاک ڈاؤن کے بعد بازار سنسان، مزدوروں کی نقل مکانی تیز

Published

on

railway-market

قومی دارالحکومت دہلی میں لاک ڈاؤن کے پہلے دن منگل کو مصروف ترین بازار سنسان رہے، اور ریلوے اسٹیشنوں اور بس اڈوں پر مہاجر مزدوروں کی بھیڑ دیکھی گئی وزیر اعلی اروند کیجریوال کے پیر کے روز لاک ڈاؤن کا اعلان کرنے کے بعد ہی مہاجر مزدوروں کی بھاری بھیڑ آنند بہار بس اسٹیشن، ریلوے اسٹیشن اور بین ریاستی بس اڈے پر دیکھی گئی۔ جو مسلسل بڑھتی ہی جارہی ہے۔ نئی دہلی ریلوے اسٹیشن پر بھی بڑی تعداد میں مزدور اپنی اپنی ریاستوں کو واپس جانے کے لئے جمع ہوئے تھے۔

دہلی میں کورونا کیسز میں اضافے کے بعد مسٹر کیجریوال نے لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل سے میٹنگ کے بعد اگلے پیر کی صبح 5 بجے تک کے لئے لاک ڈاؤن کا اعلان کیا تھا، اور مزدوروں سے اپنے گھروں کو واپس نہ جانے کی اپیل کی تھی۔

وزیر اعلیٰ کے لاک ڈاؤن کے اعلان کے بعد آنند بہار، کوشمبی بس اڈے اور میں لوگوں کی بھاری بھیڑ جمع ہو گئی اور کووڈ کے ضابطوں پر بھی عمل نہیں کیا جا رہا تھا۔ زیادہ تر لوگوں کا کہا تھا کہ کورونا وباء پر قابو کے بعد ہی وہ سبھی دہلی لوٹیں گے۔ کچھ فیکٹریوں کے بند ہونے کے بعد مزدور واپس اپنے گھروں کو لوٹ رہے تھے۔

Continue Reading
Advertisement

رجحان

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com