Connect with us
Tuesday,04-August-2020

جرم

مالیگاؤں : محمد طالب المعروف ناٹیا کا دھار دار ہتھیار سے دوستوں نے انتہائی بے رحمی سے کیا قتل، 3 ملزمین گرفتار

Published

on

(وفا ناہید)
شہر میں کرائم کی بڑھتی شرح تشویشناک ہے. آئے دن مرڈر اور قاتلانہ حملوں کی وارداتوں سے شہر کی دینی شناخت خراب ہورہی ہیں. اب تو عالم یہ ہے کہ ذرا ذرا سی بات پر ایک دوسرے کے خلاف ہتھیار نکالے جارہے ہیں یا اس کا آزادانہ استعمال کیا جارہا ہے. جس کی وجہ سے ایسا لگ رہا ہے کہ مسجدوں میناروں کا یہ شہر جرائم کی دنیا میں اپنا ایک نام کرنے ارادہ رکھتا ہے. عید بعد کمال پورہ کے ساکن راجو بانگڑو کے مرڈر کو ابھی شہریان بھولیں نہیں تھے کہ آج بروز جمعہ, مورخہ 5 جون 2020 کے دن صبح 7 بج کر 30 منٹ پر گولڈن نگر کے ساکن, 23 سالہ محمد طالب محمد حنیف المعروف ناٹیا کا اس کے دوستوں نے انتہائی بے رحمی سے دھار دار ہتھیار کی مدد سے قتل کردیا. قتل کی یہ واردات موتی ہائی اسکول, نعمت باغ, مہانگر پالیکا اسکول نمبر 28 کے سامنے انجام دی گئی. قتل کی اطلاع ملتے ہی پوار پولس فورآ موقعہ واردات پر پہنچ گئی اور لاش کا پنچ نامہ کرکے اپنی تحویل میں لے لیا.
محمد راشد محمد حنیف (28) ساکن گولڈن نگر, سروے نمبر 133, گٹ نمبر 2, گھر نمبر 51 کی فریاد پر پوار واڑی پولس نے گناہ رجسٹرڈ نمبر 58/2020, تعزیرات ہند کی دفعہ 302 اور 34 کے تحت قتل کا مقدمہ درج کرکے تحقیقات شروع کردی. اس ضمن میں جب نمائندے نے مقتول کے گھر رابطہ قائم کیا تو مقتول کے بھائی محمد راشد نے بتایا کہ میرے بھائی کو اس کے 4 دوست لے گئے اور ایسا بتایا جارہا ہے کہ آپس میں بحث ہوئی اور اس کے دوستوں نے قتل کردیا. دراصل ایک کہانی گڑھی گئی ہے. میرے بھائی کا جو قتل ہوا ہے. اس کی باقاعدہ پلاننگ کی گئی ہے اور سپاری دے کر اس کا قتل کیا گیا ہے. جو پلاننگ تھی اسے نہیں بتارہے ہیں. بس اتنا کہہ رہے ہے کہ نشہ کئے ہوئے تھے اور بحث کے دوران ان لوگوں نے قتل کردیا. اب بحث بازی میں اتنا بڑا کام ہوسکتا ہے کیا؟ ان کو کسی نے سپاری کے طور پر لگایا تھا. لاک ڈاؤن سے قبل کالی کھولی میں واردات ہوئی تھی. وہی سب خننس نکال رہے ہیں. 2 افراد کو پولس نے ایریسٹ کیا ہے. اب ان 2 نے 3 اور نام بتائے ہیں. ہولس صرف 3 لوگوں کا نام بتارہی ہیں. اب یہ پولس کا کام ہے انکوائری کرنا. پولس اگر اچھے سے چھان بین کرتی ہے تو ساری پلاننگ سامنے آئے گی. میرے بھائی کا لڑائی جھگڑے کا ریکارڈ تھا. اس کے دوستوں نے غداری کی ہے. لیجاکر نشہ وغیرہ کرائے اور اس کے ساتھ دھوکہ کردیئے. ایک جھگڑے میں پولس نے اسے اندر کردیا تھا.
27 مئی کو مقتول کی سینٹرل جیل سے رہائی ہوئی تھی. محمد طالب المعروف ناٹیا کے قتل کے بارے میں پوار واڑی پولس اسٹیشن کے پی آئی گلاب راؤ پاٹل نے کہا کہ مقتول اپنے دوستوں کو چوری کے لئے اکسا رہا تھا. ان کے منع کرنے پر ان کے درمیان بحث ہوئی. جس میں اس کے دوست آنتک عرف اوسامہ ساکن سلاٹر ہاؤس, سلمان تارو ساکن گولڈن نگر اور نیپالی (پورا نام پتہ معلوم نہیں ) نے اس کا تیز دھار ہتھیار کی مدد سے مرڈر کردیا. گلے, ہاتھ چھاتی, پیٹ اور بازو پر دھار دار ہتھیار گھوپنے سے مقتول شدید زخمی ہوگیا اور یہ مہلک زخم اس کی موت کا سبب بن گئے. پولس نے تینوں ملزمین کو حراست میں لے لیا ہے. اس قتل کیس کی تحقیقات پوار واڑی کے ایس آر شیخ کررہے ہیں.
5 بھائیوں میں محمد طالب سب سے چھوٹا تھا. جس کی ابھی شادی بھی نہیں ہوئی تھی مگر غلط سنگت مجرمانہ ریکارڈ اور نشے کی لت نے آج ایک والدین سے ان کا بیٹا چھین لیا. ماں باپ کے اولاد کو لے کر بہت سے ارمان ہوتے ہیں اور اگر اولاد غلط راہ کا انتخاب کرلِے تو بوڑھے باپ کو جوان بیٹے کے جنازے کو کاندھا دینا پڑتا ہے. وہ باپ جو اپنے اولاد کی بہترین پرورش کے لئے اپنے خوابوں کو پرے رکھ کر اولاد کی ہر خواہش پوری کرتا ہے کہ کل یہ بیٹا اس کے بڑھاپے کا سہارا بنے گا مگر باپ وقت سے پہلے اس وقت خود کو بوڑھا محسوس کرتا ہے جب وہ اپنے بیٹے کی نشے کی لت اور مجرمانہ سرگرمیاں کی سن گن پاتا ہے.

جرم

مالیگاؤں میں جنونی بھیڑ نے پھر کیا مسلم نوجوانوں پر جان لیوا حملہ، پولس نے کیا مآب لنچنگ سے انکار، 3 افراد پولس کی گرفت میں مزید گرفتاریاں باقی

Published

on

کرائم اسٹوری : وفا ناہید
اس وقت پورے ملک حالات خراب چل رہے ہیں. 4 ماہ تک کورونا نے سب اس قدر خود میں مصروف رکھا کہ کورونا اور اس سے ہونے والی اموات , لاک ڈاؤن, تالی بجانا , دیا جلانا اور کورونا کو مسلمانوں جوڑ کر تبلیغی جماعت کو نشانہ بنانا ہی اس کا مصرف تھا. اب جب کہ کورونا 5 ماہ مکمل کرکے چھٹے ماہ قدم رکھ چکا ہے وہیں عوام کے دلوں سے کورونا کا خوف تھوڑا کم ہوا اور غیرقانونی سرگرمیوں کا آغاز ہوگیا. کوارٹنائن سینٹر میں کووڈ پیشنٹ کی آبروریزی سے لے کر قتل و خودکشی اور انکاؤنٹر کے بعد شرپسندوں کا پسندیدہ مشغلہ مآب لنچنگ تک پہنچ گیا. یوں تو لاک ڈاؤن میں چھوٹے موٹے کرائم کا سلسلہ جاری تھا مگر ادھر گذشتہ کچھ دنوں سے مالیگاؤں کے مسلم نوجوانوں کو ہجومی تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے. ابھی پچھلے دنوں جلگاؤں ضلع کے پارولہ شہر میں کچھ نوجوانوں کی مآب لنچنگ کا ویڈیو شوشل میڈیا پر وائرل ہوا تھا. جس کے بعد شہر میں تناؤ کا ماحول پیدا ہوگیا تھا. وہ تو مالیگاؤں کے مسلمان صبر و جمیل کا پیکر ہے لہذا کوئی ناخوشگوار واقعہ رونما نہیں ہوا. اس واردات کی ابھی مذمت ہی جاری تھی کل یعنی عیدالاضحیٰ کے دن مالیگاؤں شہر تعلقہ پولس اسٹیشن کی حد میں دوبارہ کچھ مسلم نوجوانوں کو تشدد کا نشانہ بنایا گیا. اس واردات کے تعلق سے جب نمائندۂ ممبئی پریس نے مالیگاؤں شہر تعلقہ پولس اسٹیشن کے پی آئی نریندر بھدانے سے بات کی تو انہوں نے بتایا کہ مالیگاؤں کے 4 افراد آٹو رکشا سے جارہے تھے . اتنے میں جو کہ ایک بائی اپنی بھیڑ بکریاں لے کر جارہی تھیں , ان نوجوانوں کے ہارن بجانے کے بعد بھی اس نے راستہ نہیں دیا. جس کی وجہ سے وہ مشتعل ہوگئے اور انہوں نے گالی گلوچ کی. جس کے بعد اس بائی کے افراد خانہ نے بائیک کے ذریعہ ان نوجوانوں کی رکشا کا تعاقب کیا اور ان کے ساتھ مار پیٹ کی. پی آئی بھدانے کے مطابق یہ مآب لنچنگ نہیں تھی. بلکہ بات یہ تھی کہ ان لوگوں نے ان کے گھر والوں کے ساتھ گالی گلوچ کی تھی. بائیک سے آٹو رکشا کا پیچھا کیا گیا. جب وہ نوجوان اپنی جاں بچا کر بھاگنے لگے تو ان پر پتھراؤ کیا. بڑے بڑے پتھر پھینکے گئے جس کی وجہ ایک نوجوان زخمی ہوگیا اور ساتھ ہی ان مشتعل افراد نے ان کی آٹو رکشا MH41 AT 0757 کو بھی پتھر سے توڑ پھوڑ دیا . پی آئی بھدانے نے مزید بتایا کہ ہم نے اس واردات میں 3 افراد کو حراست میں لیا ہے. مزید گرفتاریاں ہونی باقی ہیں. اس کیس کی تحقیقات ابھی مکمل نہیں ہوئی ہے. ان افراد پر تعزیرات ہند کی دفعات 324 اور 341 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے.
اس واردات کا بھی ویڈیو وائرل ہوا جس میں صاف دکھائی دے رہا ہے بڑے بڑے پتھروں سے آٹو رکشا کی توڑ پھوڑ کی گئی . کہا جارہا ہے کہ جب مسلم نوجوان ان شرپسندوں سے جان بظاہر بھاگ رہے تھے. تب ان پر پتھر برسائے گئے. جنونی ہجوم کی طرف سے یہ ایک جان لیوا حملہ تھا. اگر یہ مسلم نوجوان خدانخواستہ ان کے ہاتھ لگ جاتے تو شاید ان کی لاشیں گھر آتیں. ایک معمولی تکرار کو فرقہ وارانہ رنگ دے کر شہر کا ماحول خراب کرنے کی کوشش کی گئی. اس کے باوجود پولس اسے مآب لنچنگ ماننے کو تیار نہیں. اگر ان نوجوانوں کی غلطی تھی تو پولس سے رجوع کیا جاسکتا تھا. قانون ہاتھ میں لے کر اس طرح تانڈو کرنے کی ضرورت نہیں تھی.

Continue Reading

جرم

یدیورپا کے بعد ان کی بیٹی بھی کوروناکی زد میں آئی

Published

on

کرناٹک کے وزیر اعلی بی ایس یدیورپا کے بعدان کی بیٹی بھی کورونا مثبت پائی گئی ہیں اور انہیں بنگلور کے منی پال اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔
اس سے قبل مسٹر یدیورپا کواتوار کے روز کورونا پازیٹو آنے پر اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔
مسٹر یدیورپا نے اپنے ٹویٹرہینڈل پر لکھا’’میری کورونا کی رپورٹ مثبت آئی ہے ، حالانکہ میں ٹھیک ہوں۔ میں ڈاکٹروں کے مشورے پر اسپتال میں داخل ہورہاہوں۔ میں درخواست کروں گا کہ جو بھی میرے رابطے میں آنے ہیں اپنا ٹسٹ کرائیں اورخود آئسو لیشن میں چلے جائیں‘‘ ۔
وزیراعلیٰ نے دو دن قبل کوروناکاٹسٹ کرایا تھا۔
مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی اور کرناٹک کے سابق وزیراعلی اور کانگریس لیجسلیچر پارٹی کے رہنما سدارمیا سمیت متعدد رہنماؤں نے ان کی جلد صحت یابی کیلئے دعا کی ہے۔

Continue Reading

جرم

کورونا سے سب سے زیادہ متاثر چار ریاستوں میں 61 فیصد فعال کیسز

Published

on

کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثرملک کی چار ریاستوں میں اس وبا کے 3.54 لاکھ سے زیادہ کیسز ہیں جو ملک بھر میں ایسے کیسز کا تقریبا 61 فیصد ہے۔
کورونا وائرس سے بری طرح متاثر ریاست مہاراشٹر میں وائرس کے سب سے زیادہ 148843 فعال کیسز ہیں جبکہ جنوبی ہندوستان کی ریاست کرناٹک میں 74598 ، آندھرا پردیش میں 74404 اور تمل ناڈو میں 56998 ہیں ۔ ان چار ریاستوں میں کورونا کیسز کی تعداد 354،843 ہیں جو ملک بھر میں سرگرم 579،357 کیسز کا 61 فیصد سے زیادہ ہے۔
مرکزی وزارت صحت کی جانب سے پیر کے روز جاری تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق ملک بھر میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا کے 52،972 نئے کیسز درج ہوئے ہیں جس کے بعد متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد 18 لاکھ سے تجاوز کرکے 18،03،696 ہوگئی اور اب تک اس وبا سے 38،135 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں ، جبکہ مجموعی طور پر 11،86،203 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔ فی الحال اس وقت ملک میں کورونا کے 579357 فعال کیسز ہیں۔
وزارت صحت کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق ملک کی مختلف ریاستوں اور مرکز کے زیر کنٹرول علاقوں میں کورونا وائرس متاثرین کی تعداد مندرجہ ذیل ہے۔
ریاست ………………——–ایکٹیو کیسز …… شفایاب ………. ہلاک شدگان
انڈمان نکوبار —- 484 —— 242 ———- 8
آندھرا پردیش ———– 74404 —– 82886 —— 1474
اروناچل پردیش ——- 699 ——- 996 ——— 3
آسام —————— 10415 —– 32384 —– 105
بہار —————— 20306 —– 36389 —– 329
چنڈی گڑھ —————- 400 ——- 698 ——- 19
چھتیس گڑھ ————– 2482 —— 6991 —– 58
دادرا نگر نگر حویلی دمن دیو ————– 416 ——- 766 ——– 2
دہلی —————— 10356 —– 123317 —- 4004
گوا ——————– 1809 —— 4668 —— 53
گجرات —————– 14572 —– 46504 —- 2486
ہریانہ —————- 6396 —— 29690 —- 433
ہماچل پردیش ———- 1130 ——- 1559 —– 14
جموں۔کشمیر ———– 7893 ——– 13127 — 396
جھارکھنڈ —————– 7723 ——- 4682 —— 118
کرناٹک —————- 74598 —— 57725 —– 2496
کیرالہ —————— 11366 ——- 14463 —– 82
لداخ —————— 351 ——– 1108 ——– 7
مدھیہ پردیش ————– 9099 ——– 23550 —— 886
مہاراشٹر ————— 148843 —— 276809 —– 15576
منی پور —————- 1087 ———- 1737 ——- 7
میگھالیہ —————- 605 ———- 264 ——— 5
میزورم ————— 224 ———– 258 ——— 5
ناگالینڈ —————- 1282 ———- 648 ——— 5
اوڈیشہ —————- 12761 ——– 21955 —— 197
پڈوچیری ————— 1445 ——— 2309 ——- 52
پنجاب —————– 5964 ———- 1146 —— 423
راجستھان ————– 12391 ——— 30710 ——- 703
سکم ————— 368 ———— 289 ——— 1
تمل ناڈو ———— 56998 ———- 196483 —— 4132
تلنگانہ ————– 18547 ———- 47590 —— 540
تری پورہ —————- 1742 ———— 3605 ——- 27
اتراکھنڈ ———— 3070 ————- 4437 ——- 86
اتر پردیش ———– 38023 ———- 53168 —– 1730
مغربی بنگال ———- 21108 ———– 52730 —— 1678
مجموعئ —————— 579357 ———- 1186203 —- 38135

Continue Reading
Advertisement

رجحان

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com