Connect with us
Friday,23-April-2021

(Lifestyle) طرز زندگی

موسیقی کے ایل سہگل درد بھرے نغموں کے شہشاہ تھے

Published

on

K.L.-Sahgal

شہنشاہ موسیقی کےایل سہگل نے15سال کے عرصے میں 185 نغموں کے لیے اپنی آواز دی اور 36 فلموں میں اداکاری کے جوہر بھی دکھائے اور جنوری 1947 اس دنیا سے کوچ کرگئے ۔ سہگل 1930 کی دہائی میں فلمی دنیا کے نقشے پر نظرآئے جب نیو ٹھیٹر کلکتہ کے مالک بی این سرکارنے سامعین کے سامنے پیش کیا اور انہیں زبردست شہرت حاصل ہوئی۔ سہگل کا پورا نام کندن لال سہگل تھا۔ ان کا جنم 11 اپریل 1904 میں ہوا تھا۔
معروف گلوکار اور اداکارکے مقامِ پیدائش کے بارے میں اختلاف ہے۔ کچھ کا کہنا ہے کہ جموں میں پیدا ہوئے جہاں ان کے والد تحصیلدار تھے۔ کچھ کا کہنا ہے کہ جالندھر میں پیدا ہوئے۔
ان کے بعض سوانح نگاروں کا کہنا ہے کہ انہوں نے کسی استاد سے موسیقی کی باقاعدہ تعلیم حاصل نہیں کی تھی اور نہ موسیقی کے کسی معروف گھرانے سے ان کا تعلق تھا لیکن جب وہ جموں میں تھے تووالدہ کے ساتھ مذہبی تقاریب اور مندروں میں بھجن کی محفلوں میں شرکت کرتے اور والدہ کے ساتھ مل کر بھجن خود گایا بھی کرتے۔
بعض سوانح نگاروں کا کہنا ہے کہ جموں کے ایک غیر معروف صوفی بزرگ سلمان یوسف کے آستانے پر حاضری بھی دیتے تھے اور بھجن یا عارفانہ کلام سناتے۔ یہ بزرگ خود بھی گاتے تھے اس لیے عین ممکن ہے کہ انہیں موسیقی میں کچھ درک رہا ہو اور انہوں نے سہگل کی اس سلسلے میں کچھ ابتدائی تربیت کی ہو۔
موسیقی اور گائکی سہگل کی رگ رگ میں رچی بسی ہوئی تھی جو ان کا ذریعہ معاش نہیں تھا ، نہ ہی انہوں نے اسے روزی کا ذریعہ بنانے کا کوئی منصوبہ بنایا تھا اور بنا بھی نہیں سکتے تھے، اس لیے کہ اس زمانے میں موسیقی اور پہلوانی دونوں صرف جاگیرداروں اور رجواڑوں کی سرپرستی میں فروغ پاتی تھیں اور سہگل ایک آزاد انسان تھے جن کے لئے درباروں کے آداب سے مطابقت پیدا کرنا یقیناً مشکل تھا۔ چنانچہ سہگل کلکتہ چلے گئے اور وہاں انہیں ٹائپ رائٹر بنانے والی کمپنی میں 80 روپے ماہانہ کی سیلز مین کی نوکری مل گئی۔ کلکتہ میں ہی ان کی ملاقات نیو تھئیٹر کے بانی بی۔ این ۔ سرکار سے ہوگئی۔ سرکار کو سہگل کی آواز بہت پسند آئی اور انہوں نے نیو ٹھیئٹر میں سہگل کو گلوکار کے طور پر دو سو روپے ماہانہ ملازمت پر رکھ لیا۔

Continue Reading
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

(Lifestyle) طرز زندگی

نک جونس کو مس کررہی ہیں پرینکا چوپڑا

Published

on

بالی ووڈ اداکارہ پرینکا چوپڑا ان دنوں اپنے شوہر اور امریکی پاپ گلوکار نک جونس کو بہت مس کر رہی ہیں، پرینکا چوپڑا ان دنوں اپنے آنے والے پروجیکٹ کی شوٹنگ کے لئے لندن میں ہیں، اور نک جونس سنگنگ ریئلٹی شو ’دی وائس‘ کی میزبانی کے لئے امریکہ گئے ہوئے ہیں، پرینکا اپنے شوہر کو بہت یاد کر رہی ہیں۔ انہوں نے اپنے انسٹاگرام پر ایک پوسٹ شیئر کیا ہے۔ جس میں انہوں نے اپنے پیار کا اظہار کرتے ہوئے بتایا ہے کہ وہ نِک جونس کومس کر رہی ہیں۔

پرینکا نے انسٹاگرام پر اپنی اور نک کی ایک تصویر شیئر کی ہے، جس میں دونوں ایک باغ میں نظر آ رہے ہیں۔ تصویر میں پرینکا اور نک ایک دوسرے کو بڑے پیار سے دیکھ رہے ہیں۔ اس تصویر کو شیئر کرتے ہوئے پرینکا نے لکھا ہے ’’میں آپ کو بہت مس کر رہی ہوں میرے دل۔‘‘ اس عنوان کے ساتھ ہی پرینکا نے دل والی ایموجی بنائی ہے۔

Continue Reading

(Lifestyle) طرز زندگی

پونم ڈھلوں : اپنی دلکش اداؤں سے تقریباً تین دہائیوں تک شائقین کو محظوظ کیا

Published

on

Poonam Dahlon

بالی ووڈ اداکار پونم ڈھلوں نے اپنی دلکش اداؤں سے تقریباً تین دہائیوں تک شائقین کو محظوظ کیا، لیکن کم ہی لوگوں کو معلوم ہوگا وہ اداکارہ نہیں بلکہ ڈاکٹر بننا چاہتی تھیں۔

پونم ڈھلوں کی پیدائش 18 اپریل 1962 کو کانپور میں ہوئی۔ ان کے والد ہندستانی فضائیہ میں انجینئر تھے۔ انہوں نے اپنی ابتدائی تعلیم چنڈی گڑھ کارمیل کانوینٹ ہائی اسکول سے پوری کی۔
سال 1977 میں پونم ڈھلوں کو آل انڈیا بیوٹی کانٹیسٹ میں حصہ لینے کا موقع ملا، جس میں وہ پہلے مقام پر رہیں۔

اس درمیان پونم ڈھلوں کی خوبصورتی سے متاثر ہوکر ڈائریکٹر پروڈیوسر، یش چوپڑا نے اپنی فلم ترشول میں ان سے کام کرنے کی پیشکش کی۔ پہلے تو انہوں نے اس پیشکش سے انکار کردیا لیکن بعد میں انکی دوست نے انہیں سمجھایا کہ فلموں میں کام کرنا کوئی بری بات نہیں۔ اس کے بعد پونم ڈھلوں کے گھر والوں نے انہیں اس شرط پر فلموں میں کام کرنے کی اجازت دی، کہ وہ اسکول کی چھٹیوں کے دوران ہی فلموں میں کام کریں گی۔

فلم ترشول میں پونم ڈھلوں کو سنجیو کمار، ششی کپور اور امیتابھ بچن جیسے نامور ستاروں کے ساتھ کام کرنے کا موقع ملا۔ اس فلم میں انہوں نے سنجیو کمار کی بیٹی کا کردا ر ادا کیا، جو اداکار سچن سے محبت کرتی ہیں۔ فلم میں ان پر فلمایا گیا نغمہ ‘گاپوجی گاپوجی گم گم’ ان دنوں نوجوانوں کے درمیان کریز بن گیا تھا۔ فلم ترشول باکس آفس پر ہٹ رہی۔

Continue Reading

(Lifestyle) طرز زندگی

سچترا سین نے بین الاقوامی سطح پر اپنی شناخت قائم کی تھی

Published

on

Suchitra-Sen

ہندوستانی سنیما میں سچترا سین کو ایک ایسی اداکارہ کے طور پر یاد کیا جاتا ہے، جنہوں نے بنگلہ فلموں میں قابل تعریف اداکاری کے ساتھ ساتھ بین الاقوامی سطح پر بھی اپنی خاص شناخت قائم کی۔

سچترا سین کا اصل نام روما داس گپتا تھا، اور ان کی پیدائش 06 اپریل 1931 کو پونا (بنگلہ دیش) میں ہوئی تھی۔ ان کے والد کرونوم داس گپتا ایک ہیڈ ماسٹر تھے۔ سچترا سین نے ابتدائی تعلیم پونا سے حاصل کی تھی۔ 1947 میں ان کی شادی بنگال کے مشہور صنعت کار آدی ناتھ سین کے بیٹے دیبا ناتھ سین سے ہوئی۔ 1952 میں سچترا سین نے اداکارہ بننے کے لئے فلم انڈسٹری میں قدم رکھا، اور بنگلہ فلم ’’شیش کوتھا‘‘ میں کام کیا۔ حالانکہ فلم ریلیز نہیں ہوسکی۔

سال 1952 میں ریلیز بنگلہ فلم ’’سارے چتر‘‘ بطور اداکارہ ان کی پہلی فلم تھی۔ اس فلم میں انہوں نے اتم کمار کے ساتھ پہلی بار کام کیا۔ نرمل ڈے کی ہدایت میں بنی یہ فلم مکمل طور پر مزاحیہ عنصر لئے ہوئے تھی۔ بہترین اداکاری اور اچھی مزاحیہ اسکرپٹ پر مبنی یہ فلم سپر ہٹ ثابت ہوئی۔ اس کے بعد اس جوڑی نے کئی فلموں میں ایک ساتھ کام کیا۔ ان میں ہرانو سر اور سپتوپدی قابل ذکر فلمیں ہیں۔

سال 1957 میں اجے کا رکی ہدایت میں بنی فلم ہرانو سر 1942 میں ریلیز انگریزی فلم رینڈم ہارویسٹ کی کہانی پر مبنی تھی۔

Continue Reading
Advertisement

رجحان

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com