Connect with us
Tuesday,04-August-2020

خصوصی

کورونا کے بڑھتے آنکڑوں کے درمیان ممبئی کے لئے راحت کی خبر، 15 جولائی کے بعد اہلیان ممبئی ‘راحت کی سانس’ لے سکیں گے

Published

on

ممبئی میں کورونا جنگل کی آگ کی طرح سب کو اپنی لپیٹ میں لے رہا ہے. کورونا کا قہر ہے کہ کسی طرح کم ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے. اس وقت ممبئی میں کورونا وائرس کے شکار مریضوں کی تعداد لگاتار بڑھتے ہوئے 65 ہزار سے تجاوز کرچکی ہے۔ کل ہفتہ کو کورونا کے 1190 مصدقہ مریضوں کے پائے جانے کے بعد کوویڈ-19 کے مریضوں کی جملہ تعداد 65 ہزار 329 ہو چکی ہے، مزید براں، کورونا وائرس کے وبائی دور میں، ایک دن میں اس مرض سے مرنے والوں میں کل سب سے زیادہ 136 اموات درج کی گئی، جس کے بعد مرنے والوں کی جملہ تعداد بڑھ کر 3561 ہو گئی ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ جمعہ کو بھی 114 افراد اس بیماری کے باعث لقمہ اجل ہو چکے تھے، اتوار کو بھی 136 افراد ہلاک ہونے کے بعد ایک دن میں ہلاک ہونے والوں کی یہ سب سے بڑی تعداد ہے۔
اسی دوران تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مہاراشٹر میں 3874 مصدقہ مریض ملے ہیں اور اس دوران 160 مریض فوت ہوگئے۔ مہاراشٹر میں ابھی تک کورونا مریضوں کی کل تعداد ایک لاکھ، 28 ہزار 205 درج کی گئی ہے جس میں سے 58541 مریض اس وقت زیر علاج ہیں، جبکہ 5984 مریض فوت ہو چکے ہیں۔
آج 1380 مریض شفایاب ہو کر اپنے گھروں کو واپس روانہ ہوئے، جس کے بعد ریاست میں اس مریض سے شفا پانے والے افراد کی تعداد 64153 ہو چکی ہے۔ ان میں سے ممبئی میں شفا یاب ہونے والے مریضوں کی تعداد 32867 ہے۔ ممبئی میں 24 گھنٹوں کے دوران کورونا کے 1190 مصدقہ مریض پائے گئے ہیں اور مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 3561 ہوگئی ہے، اس طرح جملہ تعداد 65 ہزار 329 ہو چکی ہے، جس میں سے 28893 مریض زیر علاج ہیں۔ کل ہفتہ کو کورونا کے 1190 مصدقہ مریضوں کے پائے جانے کے بعد آج ممبئی میونسپل کارپوریشن (بی ایم سی) کے کمشنر اقبال سنگھ چہل نے اہلیان ممبئی کے لیے ایک خوشخبری سناتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ 15 جولائی 2020 کے بعد شہریان ممبئی‘ سکون کی سانس‘ لے سکیں گے۔ انھوں نے کہا کہ 15 جولائی کے بعد کوویڈ-19 کے معاملات روزانہ 200 تک کم ہوجائیں گے۔ اموصوف نے قیاس ظاہر ہے کہ “اگلے پندرہ دن میں، نئے معاملات میں تیزی سے کمی آئے گی اور 15 جولائی تک ہمارے پاس روزانہ اوسطآ 100 سے 200 کیسز ہوں گے”۔ اقبال سنگھ چہل نے کہا ہے کہ شہریانِ ممبئی 15 جولائی کے بعد‘ سکون کی سانس‘ لے سکیں گے۔ کیونکہ شہر میں کوویڈ-19 مریضوں کی تعداد گھٹ کر ہر روز صرف 100 سے 200 تک رہ جائے گی۔ ایک رپورٹ کے مطابق، کمشنر چہل نے کہا، “3 جون کو، جب پابندیوں کو کم کیا گیا تھا، میں ذہنی طور پر کیسوں کو دوگنا دیکھنے کے لئے تیار تھا۔ مجھے یقین تھا کہ معاملات روزانہ 1500 سے 2500 تک بڑھ سکتے ہیں۔ تاہم، لاک ڈاؤن کھلنے کے باوجود، اب ہم کم کیس دیکھ رہے ہیں۔ در حقیقت، ہم پچھلے کچھ دنوں سے 1500 کے ہندسے کو عبور نہیں کر سکے ہیں۔ بی ایم سی کمشنر نے کہا، “ہم نے ایک منصوبہ تیار کیا ہے اور تیزی سے جانچ کے لئے تیار ہیں۔ ہم این جی اوز کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں، جو ایمبولینس فراہم کرے گی۔ ہم نے جانچ لیبارٹریز کو لڑکوں کو بھرتی کرنے کے لئے کہا ہے اور بی ایم سی ان کا معاوضہ ادا کرے گی۔” انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہندوستان کو اپنے صحت کے بنیادی ڈھانچے پر توجہ دینی ہوگی۔

Continue Reading
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

خصوصی

ممبئی: سوشانت سنگھ معاملے کی تفتیش کے لئے پہنچنے والے پٹنہ کے پولیس سپرنٹنڈنٹ، کوارینٹائین سینٹر پر بھیجے گئے، ہاتھ پر لگائی مہر

Published

on

اداکار سوشانت سنگھ راجپوت کی موت کے معاملے میں بہار پولیس کے ذریعہ کی جارہی تحقیقات کی رہنمائی کے لئے ممبئی پہنچنے والے پٹنہ کے سپرنٹنڈنٹ پولیس ونئے تیواری کو بی ایم سی نے الگ تھلگ رہائش پر بھیج دیا ہے۔ برہمومبائی میونسپل کارپوریشن (بی ایم سی) کے عہدیداروں نے بھی تیواری کے ہاتھ پر مہر لگا دی ہے، جس سے یہ اشارہ ہوتا ہے کہ وہ 15 اگست تک الگ رہیں گے۔
ایک پولیس عہدیدار نے بتایا کہ تیواری اتوار کو ممبئی پہنچے تھے اور بی ایم سی کے عہدیداروں نے انہیں حال ہی میں گورگاؤں میں اسٹیٹ ریزرو پولیس فورس کے گیسٹ ہاؤس میں ایک علیحدہ رہائش گاہ پر 14 دن کے لئے بھیجا تھا۔ اتوار کے روز بہار کے ڈائریکٹر جنرل پولیس گپتیشور پانڈے نے الزام لگایا کہ تیواری کو ممبئی میں بی ایم سی کے عہدیداروں نے زبردستی الگ رہائش گاہوں میں بھیجا تھا۔
پانڈے نے کل ٹویٹ کیا، “آئی پی ایس آفیسر ونئے تیواری پولیس ٹیم کی سربراہی کے لئے سرکاری ڈیوٹی پر آج پٹنہ سے ممبئی پہنچے، لیکن بی ایم سی کے عہدیداروں نے انہیں زبردستی رات 11 بجے کوارینٹائین پر بھیج دیا۔ “سوشانت سنگھ راجپوت (34) 14 جون کو اپنے باندرا اپارٹمنٹ میں مردہ حالت میں پائے گئے تھے۔ اتوار کے روز ممبئی ہوائی اڈے پر پہنچنے کے بعد، تیواری نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ وہ یہاں اپنی ٹیم کی قیادت کرنے آئے ہیں اور ہر ممکن زاویوں سے معاملے کی تحقیقات کریں گے۔
انہوں نے کہا، “ممبئی پولیس اپنے انداز میں اس معاملے کی تحقیقات کر رہی ہے اور ہم اپنے طریقے سے تفتیش کریں گے۔” اگر ضرورت پڑی تو ہم بالی ووڈ کی مشہور شخصیات کے بیانات بھی ریکارڈ کریں گے جن کے بیانات ممبئی پولیس نے ریکارڈ کروائے ہیں۔ انہوں نے کہا، “تحقیقات صحیح راہ پر گامزن ہیں اور ہم صحیح سمت میں گامزن ہیں۔” ہماری ٹیم یہاں کیس سے متعلق تمام اہم دستاویزات حاصل کرنے آئی ہے۔
ممبئی پولیس نے ابھی تک سوشانت راجپوت کیس میں 40 کے قریب لوگوں کے بیانات قلمبند کیے ہیں، جن میں اداکار کا کنبہ، کک اور فلمی دنیا سے تعلق رکھنے والے افراد شامل ہیں۔ بہشت پولیس پچھلے ہفتے سوشانت کے والد کرشنا کمار سنگھ کی طرف سے ‘خودکشی کے لیے اکسانے’ کے معاملے میں درج کی گئی شکایت کی بنیاد پر پٹنہ میں الگ تفتیش کررہی ہے۔ بہار پولیس نے راجپوت کی موت کے معاملے میں اب تک 10 افراد کے بیان قلمبند کیے ہیں۔

Continue Reading

خصوصی

کنٹینمنٹ زون میں لاک ڈاؤن کو سختی سے نافذ کیا جائے گا

Published

on

منپہ کمشنر ابھیجیت بنگار نے شہر کے تمام کنٹینمنٹ زونوں میں لاک ڈاؤن کو سختی سے نافذ کرنے کی ہدایت کی ہے۔ ’’میشن بریک داچین‘‘منپہ کمشنر بنگار جو موثر طریقے سے نفاذ میں مصروف ہیں انہوں نے کہا کہ کورونا متاثر افراد کی جلد از جلد تلاش کرنا بہت ضروری ہے۔ اس کے لیے صحیح طریقے سے تھرمل اسکریننگ کرنے اور کنٹینمنٹ زون کو مناسب طریقے سے چلانے کی ضرورت ہے۔
اگر ہم یہ سب مؤثر طریقے سے کرتے ہیں تو ہم موت کی شرح کو مؤثر طریقے سے قابو کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔ ایرولی ڈیپارٹمنٹ علاقے میں کوویڈ ۔19 کی صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے منپہ کمشنر بنگار نے محکمہ کے افسر ہیلتھ آفیسر اور پولیس آفیسر کے ساتھ کورونا کنٹرول سسٹم پر غور کیا اور ضروری ہدایات دیں۔ منپہ کمشنر بنگار نے اپنے ماتحت افراد سے کہا کہ کنٹینمنٹ زون بنانے کے دوران مقامی جغرافیائی حالات اور انتظامی انتظامات کا خصوصی خیال رکھیں۔
انہوں نے کہا کہ کنٹینمنٹ زون کا اعلان کرنے کے بعد اس سے متعلق اصولوں پر سختی سے عمل کرنے کی ضرورت ہے۔ سختی کے بغیر کورونا پھیلاؤ پر قابو نہیں پایا جاسکتا ہے۔ منپہ کمشنر نے کہا کہ اگر کسی کنٹینمنٹ زون میں صرف ایک ہی کورونا مریض ہے، تو اس طرح کے پہلے اور دوسرے قسم کے زون میں منپہ کے محکمہ آفس کے افسران اور ملازمین کو اس زون میں لاک ڈاؤن نافذ کرنے کی ذمہ داری سونپی جانی چاہیے۔
اسی طرح اگر آس پاس کے علاقے میں 5 سے زیادہ کورونا مریض ہیں تو پھر مقامی پولیس کی مدد سے تیسری قسم کے کنٹینمنٹ زون میں 24 گھنٹے داخلے پر پابندی کا سختی سے عمل پیرا ہونا چاہیے۔ ان کنٹینمنٹ زون میں مقیم باشندوں کے روزگار کے لئے فراہمی کا مناسب طریقہ محکمہ کے دفتر کے ذریعہ منصوبہ بنایا جائے۔ اس کام میں عوامی نمائندوں اور معاشرے / کالونی کے عہدیداروں کا تعاون بھی لیا جائے۔ منپہ کمشنر نے کنٹینمنٹ زون میں کورونا مریضوں کی مؤثر طریقے سے تلاش کرتے ہوئے ان بزرگوں کا خاص خیال رکھنے کو کہا ہے جو ذیابیطس، ہائی بی پی، دل کی بیماری، گردوں کی بیماری اور دیگر سنگین بیماریوں میں مبتلا ہیں۔ انہوں نے اپنے ماتحت افسران کو ہدایت کی ہے کہ وہ کنٹینمنٹ زون میں نئے کورونا سے متاثرہ افراد کی تلاش کریں۔ ہر شخص کو کورونا جیسے علامات کا انٹیجن کا معائنہ کرنا چاہیے اور جو بھی شخص مثبت مریضوں کے ساتھ رابطہ میں آیا ہے اسے کم سے کم وقت میں تلاش کیا جانا چاہیے تاکہ ان کی بھی کورونا جانچ کی جائے۔

Continue Reading

خصوصی

عیدالاضحی گھر میں منائے، عوامی پروگرام پر پابندی

Published

on

بھیونڈی میں عیدالاضحی کے موقع پر مسلم کمیونٹی کے ذریعہ عوامی پروگراموں پر پابندی عائد کردی گئی ہے، ہر سال چھوٹے بڑے جانوروں کی قربانی دینے کے رواج کو اس سال کوویڈ ۔19 کی وجہ سے متعدی بیماری کو مدنظر رکھتے ہوئے، بھیونڈی منپہ نے بقرعید گھر میں منانے کا حکم دیا ہے۔ منپہ کمشنر ڈاکٹر پنکج آشییہ نے بھیونڈی کے مسلمان بھائیوں سے گھر میں بقرعید منانے کی اپیل کی ہے۔
اس سلسلے میں ریاستی حکومت کی طرف سے رہنما اصول جاری کردیئے گئے ہیں۔ منپہ کمشنر نے شہر کے شہریوں سے کہا کہ وہ مساجد اور عیدگاہوں جیسے عوامی مقامات پر عیدالاضحی کی نماز پڑھنے کے بجائے گھروں میں نماز پڑھیں۔ اس کی وجہ سے جانوروں کے بازار بھی بند رہے گے۔ انہوں نے کہا ہے کہ اگر شہری جانوروں کی خریداری کرنا چاہتے ہیں، تو انہیں آن لائن یا ٹیلیفون کے ذریعہ جانور خریدنا چاہیے اور منتظر طریقہ سے قربانی کرنی چاہیے۔
انہوں نے کہا ہے کہ فی الحال محدود علاقوں میں پابندی میں کوئی تبدیلی نہیں ہوگی۔ معاشرتی فاصلے کے اصول کے مطابق، شہریوں کو عیدالاضحی کے موقع پر کسی بھی عوامی مقامات پر ہجوم نہیں کرنا چاہیے۔ منپہ کمشنر نے کہا ہے کہ اس سے قبل شہر کے مختلف علاقوں میں منپہ کے ذریعہ عارضی سلاٹر ہاؤسز تعمیر کیے گئے تھے، لیکن شہریوں کو یاد رکھنا چاہیے کہ اس سال عارضی طور پر کورونا کو مدنظر رکھتے ہوئے مذبح خانہ نہیں بنائے گئے۔

Continue Reading
Advertisement

رجحان

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com