Connect with us
Saturday,26-September-2020

(جنرل (عام

ایک بار پھرحکومت بنتے ہی علیحدہ ’جل شکتی‘ وزارت کا قیام کیا جائے گا : مودی

Published

on

وزیراعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ 23 مئی کو ایک بار پھر مرکز میں ان کی حکومت بننے پر پانی سے منسلک تمام مسائل کوحل کرنے کے لئے الگ ’جل شکتی‘ وزارت کا قیام کیا جائے گا۔
سترہویں لوک سبھا کے لئے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی)، اے آئی اے ڈی ایم کے اور دیگر اتحاد کے امیدواروں کے حق میں انتخابی تشہر کرنے آئے مسٹر مودی نے ہفتے کو کہا’’ہمارے محنت کش ماہی گیر روزی روٹی کے لئے سمندر پر منحصر ہیں ۔ آپ کا چوکیدار ماہی گیروں کی فلاح و بہبود کے لئے بڑا فیصلے لینے کے قابل ہے۔ مرکز میں 23 مئی کے بعد ایک بار پھر مودی حکومت بننے اور ان کے عہدہ سنبھالنے کے بعد علیحدہ ’ جل شکتی ‘ وزارت کا قیام کیا جائے گا جو پانی سے منسلک تمام معاملات کو دیکھے گی ۔ سری لنکا سے 1900 ہندوستانی ماہی گیروں کو رہا کرایا گیا۔ ان میں سے کچھ ایسے ہیں جو سزائے موت کا سامنا کر رہے تھے‘‘۔
انہوں نے وارانسی سے ممبر پارلیمنٹ ہونے کا ذکر کرتے ہوئے کہا’’میں بنارس سے رکن پارلیمنٹ ہوں جس نے رام ناتھ پورم کو یقین اور روحانیت کے دھاگے میں پرویا ہے‘‘ ۔ رام ناتھ پورم کا ذکر کرتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا یہاں سے ملک کے سابق صدر آنجہانی اےپی جے عبدالکلام کا تعلق تھا۔ ڈاکٹر کلام نے ملک کے لئے کئی خواب دیکھے اور آج یہ ہم سب کا فرض ہے کہ ان کے خوابوں کو پورا کر کے ملک کو ترقی کی نئی بلندیوں پر لے کر جانا ہے‘‘۔

تفریح

دیپیکا پڈوکون منشیات کے معاملے میں بیان ریکارڈ کروانے کے لئے این سی بی آفس پہنچی

Published

on

اداکارہ سوشانت سنگھ راجپوت کی موت سے متعلق منشیات کے معاملے کی تحقیقات کے سلسلے میں اداکارہ دیپیکا پڈوکون ہفتے کی صبح جنوبی ممبئی کے این سی بی آفس پہنچ گئیں۔ ایک اہلکار نے یہ اطلاع دی۔ دیپیکا صبح 9:50 بجے چھوٹی کار میں کولابا کے این سی بی کے گیسٹ ہاؤس پہنچ گئیں۔
پولیس کی ایک بڑی تعداد کو نارکوٹکس کنٹرول بیورو (این سی بی) کے دفتر کے باہر تعینات کیا گیا ہے اور دفتر کے باہر بیرکیڈس لگا دیئے گئے ہیں۔ میڈیا کے افراد کی ایک بڑی تعداد وہاں جمع ہوگئی ہے۔ دیپیکا کو این سی بی نے مبینہ طور پر بالی ووڈ منشیات کے گٹھ جوڑ سے متعلق تحقیقات کے سلسلے میں پوچھ گچھ کے لئے بلایا ہے۔ ایسی اطلاعات تھیں کہ دپیکا کے شوہر اداکار رنویر سنگھ نے ایجنسی سے پوچھا ہے کہ کیا وہ اپنی اہلیہ سے پوچھ گچھ کے دوران وہیں رہ سکتے ہیں۔ تاہم، این سی بی نے جمعہ کو واضح کیا کہ انہیں ایسی کوئی درخواست موصول نہیں ہوئی ہے۔
سنیچر کو تفتیشی ایجنسی نے بالی ووڈ کی دو دیگر اداکاراؤں شردھا کپور اور سارہ علی خان کو بھی پوچھ گچھ کے لئے طلب کیا ہے۔ اداکارہ دیپیکا پڈوکون کی منیجر کرشمہ پرکاش کو بھی ہفتے کے روز پوچھ گچھ میں حاضر ہونے کو کہا گیا ہے۔ کرشمہ اپنا بیان ریکارڈ کرنے کے لئے جمعہ کو این سی بی کے سامنے پیش ہوگئیں تھی۔ این سی بی کے ذرائع نے بتایا تھا کہ کرشمہ پرکاش کی واٹس ایپ چیٹ سے انھوں نے ‘ڈی’ کے ساتھ گفتگو کا انکشاف کیا تھا اور مرکزی ایجنسی یہ جاننا چاہتی تھی کہ وہ شخص کون تھا۔

Continue Reading

سیاست

کانگریس اکیلے تھانہ ایم این پی انتخابات لڑے گی، تیاریاں شروع

Published

on

congress

مہاراشٹرا کے تھانے کانگریس نے اگلے منپا انتخابات اکیلے ہی لڑنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ تھانہ منپا انتخابات کو قریب دو سال باقی ہیں۔ لیکن کانگریس کی تھانہ یونٹ جو ریاست کے مہاوکاس آگھاڑی کا حصہ ہے، نے انتخابات کے لئے پہلے ہی تیاریوں کا آغاز کردیا ہے۔ سٹی صدر ایڈووکیٹ وکرانت چوہان نے نو مقرر کردہ عہدیداروں سے ایک میٹنگ کی۔
اجلاس میں عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے چوہان نے کہا کہ آئندہ منپا انتخابات میں پارٹی کی جانب سے تمام نشستوں پر امیدوار کھڑے کیے جائیں گے۔ لہذا، عوامی مسائل اور عوامی افادیت کے پروگراموں کو اب سے شروع کیا جانا چاہئے۔ خیال رہے کہ گزشتہ ہفتے تھانہ سٹی کانگریس کے 285 عہدیداروں کی ایک جمبو سٹی ایگزیکٹو کا اعلان کیا گیا تھا۔
مذکورہ عہدیداروں کے پہلے اجلاس کے اجلاس کی سربراہی وکرانت چوہان نے کی۔ تھانہ منپا میں کانگریس کے صرف تین کارپوریٹرز ہیں اور شہر میں کانگریس بہت کمزور ہے۔ ایسی صورتحال میں، کانگریس تنہا انتخاب لڑنے کی جسارت کر سکے گی، یہ آنے والا وقت ہی بتائے گا۔ اس اجلاس میں سابق صدر منوج شندے، انیل سالوی، ریاستی ممبر سکھدیو گھولپ، جے بی یادو، سچن شندے، خواتین صدر شلپا سونونے، وغیرہ موجود تھے۔

Continue Reading

خصوصی

بائیکلا کے لوگ لائٹ بل کو لے کر افسردہ، کہا اگردہلی حکومت معاف کرسکتی ہے تو مہاراشٹر حکومت کیوں نہیں؟

Published

on

جمعہ کی شام ممبئی کے بائیکلہ علاقے میں عوام نے بجلی بل کو لے کر مظاہرہ کیا۔ بتادیں کہ، یہ مظاہرہ بجلی کا بل ہزاروں روپئے میں آنے کی وجہ سے کیا گیا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ، ان کا کم از کم 6 مہینے کا بجلی بل 35 سے 36 ہزار اور 60 ہزار روپئے تک ہیں اور وہ اتنا پیسہ کہاں سے لائیں گے، نہ تو ان کے پاس نوکری ہے اور نہ ہی کھانے پینے کے پیسے ہیں۔ لوگوں نے یہ بھی سوال اٹھایا ہے کہ، اگر دہلی حکومت بجلی کا بل معاف کر سکتی ہے تو مہاراشٹر حکومت کیوں نہیں؟
مہاراشٹر میں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے قہر کی وجہ سے مہاراشٹر حکومت نے مارچ کے مہینے سے لاک ڈاؤن کیا تھا۔ تمام بڑی کمپنیاں، دکانیں، مالز، دفاتر وغیرہ مکمل طور پر بند ہوگئے تھے۔ جس کی وجہ سے تمام لوگوں کے معاشی حالات بھی کمزور ہوچکی ہیں۔ بہت سے لوگوں نے اپنی ملازمتیں بھی گنوا دی ہیں۔ ایسی صورتحال میں، اگر بجلی کا بل ہزاروں میں آرہا ہے، تو وہ اسے بھرنے کے لئے اتنی رقم کہاں سے لائیں گے۔

بائیکلہ میں واقع پترا چال میں رہنے والے ایک شخص نے بتایا کہ، “ہمارے یہاں سب ٹیکسی چلانے اور لوکل ملازمت والے لوگ رہتے ہیں اور ان کا پچھلے 6 ماہ سے کوئی کام نہیں ہے۔ ان کی ایک دن میں 500 روپے کی آمدنی نہیں ہے اور 6 ماہ کا بل 20 ہزار سے 60 ہزار تک آیا ہے۔ مہاراشٹر حکومت کو اس بل کو معاف کرنا چاہئے۔ ”
اور ایک شخص نے کہا، “ہمارا علاقہ بی ایم سی کے ماتحت آتا ہے اور گذشتہ 6 ماہ کا بجلی بل بی ایم سی کو معاف کرنا چاہئے۔ مزید کہا کہ، اگر دہلی کی کیجریوال حکومت بجلی کا بل معاف کرسکتی ہے تو، مہاراشٹر حکومت کو کیوں نہیں کر سکتی ؟
اسی طرح پترا چال کے لوگوں نے عام لوگوں کے حالات کو مہاراشٹر حکومت کے نوٹس میں لایا ہے۔ دیکھنا یہ ہے کہ کیا حکومت مہاراشٹر عام لوگوں کے سوالوں کو حل کرسکتی ہے یا نہیں۔

Continue Reading
Advertisement

رجحان

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com