Connect with us
Friday,26-February-2021

(جنرل (عام

جنوبی کشمیرکےشوپیاں میں تصادم، دو جنگجومارے گئے

Published

on

جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیاں میں ہفتہ کی صبح فورسز اور جنگجوئوں کے درمیان تصادم ہوا جس میں دو جنگجو مارے گئے۔
ذرائع نے بتایا کہ فوج، ریاستی پولیس کے ایس او جی اور سی آر پی ایف نے ہفتہ کی صبح شوپیاں کے گہند نامی علاقے کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا۔
انہوں نے بتایا کہ تلاشی آپریشن کے دوران میوے باغات میں چھپے بیٹھے جنگجوئوں نے فورسز پر فائرنگ کی، فورسز نے جوابی فائرنگ کی جس میں دو جنگجو مارے گئے۔
سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ مارے گئے جنگجوئوں کی شناخت اور تنظیمی وابستگی معلوم کی جارہی ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ علاقہ میں تلاشی آپریشن جاری ہے۔ دریں اثنا انتظامیہ نے ضلع شوپیاں میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات منقطع کرادی ہیں۔

(جنرل (عام

’اونی ‘کی موت معاملے میں توہین عدالت کی کاروائی سے انکار

Published

on

SUP

سپریم کورٹ نے مہاراشٹرا کے یاوتمل میں سنہ 2018 میں ’آدم خور‘ شیرنی اونی کو مارنے کے معاملے میں مہاراشٹر سرکار کے افسروں کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کرنے سے انکار کر دیا۔ چیف جسٹس شرد اروند بوبڈے، جسٹس اے ایس بوپنا اور جسٹس وی راما سبرا منیم پر مشتمل بنچ نے عرضی گزار سنگیتا ڈوگرہ کی عرضی کی سماعت کے دوران کہا کہ شیرنی کو مارنے کا قدم سپریم کورٹ کے احکامات کے تحت اٹھایا گیا تھا۔

جسٹس بوبڈے نے کہا کہ وہ اس معاملے کو دوبارہ نہیں کھولنا چاہتے، کیوں کہ شیرنی کو مارنے کی اجازت سپریم کورٹ سے لی گئی تھی۔

عدالت نے عرضی گزار کی ان عرضیوں کو بھی نظر آنداز کر دیا، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ شیرنی کی موت پر جشن منایا جانا عدالت عظمیٰ کے 11 ستمبر 2018 کے حکم کی خلاف ورزی ہے۔ اس حکم کے تحت شیرنی کی موت پر جشن منانے پر پابندی عائد تھی۔ جسٹس بوبڈے نے کہا کہ جشن منانے میں عہدیدار شامل نہیں تھے، بلکہ صرف گاؤں والوں نے جشن منایا تھا۔

واضح رہے کہ عدالت نے اس معاملے میں نوٹس جاری کیا تھا، جس کے جواب میں مہاراشٹرا حکومت نے آج حلف نامہ داخل کیا۔

اس میں کہا گیا ہے شیرنی کو گولی مار نے کا حکم کہ عدالت عظمی نے ستمبر 2018 میں دیا تھا۔ حلف نامے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ یہ جشن گاؤں والوں نے منایا تھا نہ کہ افسروں نے۔ عرضی گزار نے معاملے کو واپس لینے کے لئے بنچ سے اجازت مانگی جسے اس نے قبول کر لیا۔

Continue Reading

(جنرل (عام

شمالی کشمیر کے گریز میں محکمہ دیہی ترقی کے ایک افسر کی اچانک موت

Published

on

death

شمالی کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ کے گریز علاقے میں جمعے کے روز محکمہ دیہی ترقی کے ایک افسر کی دوران ڈیوٹی ہی اچانک موت واقع ہوئی۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ وادی گریز کے تلیل تحصیل میں ایک بلاک ڈیولپمنٹ افسر (بی ڈی او) جمعے کے روز دوران ڈیوٹی ہی اچانک گر کر بے ہوش ہوگیا۔

انہوں نے بتایا کہ مذکورہ افسر کو بے ہوشی کے عالم میں ہی نزدیکی ہسپتال منتقل کیا گیا، جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دیا۔ متوفی افسر کی شناخت 48 سالہ محمد سلیم درزی ساکن اچھ بل اننت ناگ کے بطور ہوئی ہے۔

بلاک میڈیکل افسر حاجن ڈاکٹر طاہرہ نے کہا ہے کہ مذکورہ افسر کی لعش کو سب ضلع ہسپتال گریز لایا گیا ہے، جہاں پوسٹ مارٹم کر کے موت واقع ہونے کی وجہ معلوم کی جائے گی۔

دریں اثنا ضلع مجسٹریٹ بانڈی پورہ اویس احمد نے اس واقعے پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا ہے کہ افسر کے جسد خاکی کو گریز لانے کی کوششیں جاری ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں صوبائی کمشنر کشمیر کے ساتھ برابر رابطے میں ہوں، تاکہ لعش کو واپس لانے کے لئے خصوصی طیارے کا انتظام کیا جا سکے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ موت واقع ہونے کی وجوہات معلوم کی جا رہی ہیں۔

Continue Reading

(جنرل (عام

سدھارتھ نگر کے سڑک حادثے میں 40 عقیدتمند زخمی

Published

on

accident

اتر پردیش میں ضلع سدھارتھ نگر کے ڈومریا گنج علاقے میں دو گاڑیوں کے ٹکرانے سے تقریباً 40 زائرین زخمی ہوگئے۔ حادثے کے شکار عقیدت مند ضلع بلرام پور میں کوتوالی نگر علاقہ کے مشرولیا فتیجوت گاؤں کے باشندے ہیں، جو گورکھپور میں واقع ایک مزار کی زیارت کے بعد واپس آ رہے تھے۔ راستے میں بلرام پور-سدھارتھ نگر سرحدی علاقے بیوا چوک کے نزدیک منی ٹرک سے ایک گاڑی ٹکرا گئی۔اس حادثے میں منی ٹرک میں سوار زائرین زخمی ہوگئے، جنہیں ضلع اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ زخمیوں میں چھ کی حالت سنگین بنی ہوئی ہے۔ ان میں مردوخواتین کے علاوہ بچے بھی شامل ہیں۔

Continue Reading
Advertisement

رجحان

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com